Haj Noha 2020 | Shabih Gopalpuri Nohay 2020 | New Noha 2020 | Mujhko Haj Karne Nahi Deti | 1442/2020

Haj Noha 2020  Shabih Gopalpuri Nohay 2020  New Noha 2020  Mujhko Haj Karne Nahi Deti 1442/2020


Aapke baad ye tuti h qayamat nana
Mujhko haj karne nii deti ye ummat nana

Apne shabbir ki sun lije shikayat nana
Mujhko haj karne nii deti ye ummat nana

Kya mere dil pe guzarti h koi kya jane
Haj na kar pane ka gham warise kaba jane
Chhord kar kabe ko main karta hun hijrat nana

Hurmat khana e kaba kahin pamal na ho
Ye zameen khun se nawase k tere laal na ho
Khana e haq ki bachaunga main hurmat nana

Kaise makke se kiya h ye safar sarwar ne
Kaise ehram utara h tere dilbar ne
Dar h ruk jaye na dil ki mere harkat nana

Apna haj ab main karunga sare maqtal pura
Qibla e ishq banaunga tujhe karbobala
Sbko samjhaunga main haj ki fazilat nana

Asre aashur mera jab dame rukhsat hoga
Mera ehram tb ehram e shahadat hoga
Koi chhinega na ab mujhse ye azmat nana

Barchhi sine se nikalunga jo main akbar k
Dar hai halat na ho jayen kahin mahshar k
Dekh kar fakhre barahim ki ghurbat nana

Ediyan ragdega jab pyas se asghar ran me
Chahe zamzam ki jagah soch raha hun ban me
Khu'n ugalne na lage dashte musibat nana

Sayi karte hain sabhi baine safa wa marwa
Or main jaunga maqtal se ba suwe khaima
Leke aaghosh me shishmahe ki maiyyat nana

Mujhko karne na diya logon ne kabe ka tawaf
Meri hamshir karegi mere laashe ka tawaf
Main usey sonp k jaunga neyabat nana

Sar main sajde me kataunga mera wada h
Main shariyat ko bachaunga mera wada h
Noke naiza se karunga main tilawat nana

Haj k aiyyam me asghar ne likha h noha
Isko padhta h muharram me shabihe khasta
Karna mahshar me zarur inki shifaat nana



آپ کے بعد یہ ٹوٹی ہے قیامت نانا
مجھکو حج کرنے نہیں دیتی یہ امت نانا

اپنے شبیر کی سن لیجے شکایت نانا
مجھکو حج کرنے نہیں دیتی یہ امت نانا

کیا مرے دل پہ گزرتی ہے کوئ کیا جانے
حج نہ کر پانے کا غم وارث کعبہ جانے
چھوڑ کر کعبے کو کرتا ہوں میں ہجرت نانا

حرمت خانہ کعبہ کہیں پامال نہ ہو
یہ زمیں خوں سے نواسے کے ترے لال نہ ہو
خانہ حق کی بچاونگا میں حرمت نانا

کیسے مکہ سے کیا ہے یہ سفر سرور نے
کیسے احرام اتارا ہے ترے دلبر نے
ڈر ہے رک جائے نہ دل کی مرے حرکت نانا

اپنا حج اب میں کرونگا سر مقتل پورا
قبلہ عشق بناونگا تجھے کرب و بلا
سب کو سمجھاونگا میں حج کی فضیلت نانا

عصر عاشور مرا جب دم رخصت ہوگا
میرا احرام تب احرام شہادت ہوگا
کوئ چھینے گا نہ اب مجھسے یہ عظمت نانا

برچھی سینے سے نکالونگا جو میں اکبر کے
ڈر ہے حالات نہ ہو جائیں کہیں محشر کے
دیکھ کر فخر براہیم کی غربت نانا

ایڑیاں رگڑے گا جب پیاس سے اصغر رن میں
چاہ زمزم کی جگہ سوچ رہا ہوں بن میں
خوں اگلنے نہ لگے دشت مصیبت نانا

سعی کرتے ہیں سبھی بین صفا و مروہ
اور میں جاونگا مقتل سے بسوئے خیمہ
لیکے آغوش میں ششماہے کی میت نانا

مجھکو کرنے نہ دیا لوگوں نے کعبے کا طواف
میری ہمشیر کرے گی مرے لاشے کا طواف
میں اسے سونپ کے جاونگا نیابت نانا

سر میں سجدے میں کٹاونگا میرا وعدہ ہے
میں شریعت کو بچاونگا میرا وعدہ ہے
نوک نیزہ سے کرونگا میں تلاوت نانا

حج کے ایام میں اصغر نے لکھا ہے نوحہ
اس کو پڑھتا ہے محرم میں شبیہ خستہ
کرنا محشر میں ضرور انکی شفاعت نانا

Title - Mujhko Haj Karne Nahi Deti Ye Ummat Nana | Noha 2020 | Noha Imam Hussain 2020 | Kaaba Se Imam Hussain Ka Safar
Related - Safar Imam Hussain Makkah To Karbala | Haj Noha 2020
Reciter - Shabih Gopalpuri
Poetry - Maulana Nadeem Asghar
Audio - Javed Azad
Video - Azmat Ali
Production - Azadari Chitora

Haj Noha 2020  Shabih Gopalpuri Nohay 2020  New Noha 2020  Mujhko Haj Karne Nahi Deti 14422020

Previous
Next Post »