Dil Karbala Main Reh Gaya , May Aa Gaya Yahan 

Ye Dil Bina Hussain AS Kay Paye Sukoon Kahan  

Dil Karbala Main Reh Gaya , May Aa Gaya Yahan


Nam E Hussain AS Kafi Tha Ronay Kay Wastay
Ik Ik Qadam Rulati Yun Karbala Mujay
Pehle Main Khemagah E Hussaini Pay Ruk Gay (X2)
Yad AaGya KI Aik Behen Yan Thi Noha Khuwan
Gurbat Main Qatl Ho Gaya Mazloom BeWatan
Mai Bhai Bhai Kehti Thi Lasha Behen Behen

Nikla Main Is Kay Bad Khyyam E Hussain AS Say
Aasar Thodi Dur Thay Qit E Yadain Kay
Daikha Maqam E Bazu Bureda Main Ro Diya(X2)
Kesay Pukara Hoga Wafaon Ka Asman
Meray Hath Nahi Hain, Meray Hath Nai Hain

Dil Karbala Main Reh Gaya , May Aa Gaya Yahan 


Nazdeek Tha Maqam E Ali Akbar AS Jawan
Girya Kunan Thi Sehra Leay Chand Bibiyan
Awaz Ik Fizaon Main Dilko Hilati Thi
Baba AS Milay To Kehna Ki Kehta Tha Ik Jawan
Bejan Ab Labon Par Barchi Na Khencna
Bola Pidar Say Akbar AS Barchi Na Khaincna
Gehwara Aik Choti Imarat Main Tha Rakha
Gehwaray Main Ik Shalo Ka Tha Khoon Main Bhara
Gehwara Choom Choom Kay Day Day Kay Loriyan 
Lagta Tha Keh Rahi Ho Hussain O Hassan AS Ki Maa
Maa Qurban Asgar AS Aa Jao

Dil Karbala Main Reh Gaya , May Aa Gaya Yahan 



Han Wo Maqam Jo Zameen Say Buland Tha
Beti Ali O Zahra SA Ki Pohnchi Basad Buka
Daikhi Jo Chalti Gardan E Shabbir AS Par Churi
Zainab SA Pukari Baba AS Ghazab Ho Gaya Yahan
Zainab SA Lipat Kay Bap Say Daiti Rahi Sada
70 Qadam Ka Fasila Bhai BehenMain Tha

Jannat Nishan Hay Ajj BHi Roza Hussain AS Ka
Maqsood E Kainat Hay Baba Hussain AS Ka
Itnay Ameer Bap Kay Betay Nay Qu Kaha
Faryad Kar Rahi Ho Jo Sukhi Ui ZubanAmma Ghareeb Hung Mai, Amma Ghareeb Hung Main

Dil Karbala Main Reh Gaya , May Aa Gaya Yahan 



Manzarf Bada Ajeeb Tha Reehan Aor Raza
Maqtal Ki Simat Janay Lagay Shah e Karbala
Aor Neend Say Sakina SA Kay Chehray Pay Waram Tha
Godi Main Lekay Sheh Nay Kaha Ab Na Ho Fughan
Meri Sakina SA Ko Neend Aa Rhai Hay,Meri Sakina SA Ko Neend Aa Rhai Hay

Dil Karbala Main Reh Gaya , May Aa Gaya Yahan 



Noha Lyrics in Urdu 
دل کربلا میں رہ گیا میں آگیا یہاں۔
یہ دل بنا حسین ع کے پائے سکوں کہاں۔

01۔ نام حسین ع کافی تھا رونے کے واسطے۔
اک اک قدم رولاتی ہے یوں کربلا مجھے۔
پہلے میں خیمہ گاہ حسینی ع پہ رک گیا۔ 2x
یاد آگیا کے ایک بہن یاں تھی نوحہ خواں۔ 
غربت میں قتل ہوگیا مظلوم بہ وطن،
میں بھائی بھائی کہتی تھی لاشہ بہن بہن۔
02۔ نکلا میں اس کے بعد خیام حسین ع سے۔
آثار ٹھوڑی دور تھے قطع یدین کے۔
دیکھا مقام بازو بریدہ میں رودیا×2
کیسے پکارا ہوگا وفاوں کا آسماں ۔
میرے ہاتھ نہیں ہیں 
میرے ہاتھ نہیں ہیں۔
03۔ نزدیک تھا مقام علی اکبر جواں
گریہ کناں تھی سہرا لیے چند بیبییاں 
آواز اک فضاوں میں دل کو ہلاتی تھی۔×2
بابا ملیں تو کہنا کے کہتا تھا اک جواں۔
ہے جان اب لبوں پر بر چھی نہ کھیچنا۔
بولے پدر سے اکبر ع برچھی نہ کھیچنا۔

04۔ گہوارا ایک چھوٹی عمارت میں تھا رکھا۔
گہوارے میں شلوکا تھا اک خون میں بھرا۔
گہوارا چوم چوم کے دے دے کے لوریاں ۔
لگتا تھا کہ رہی ہوں حسین ع و حسن کی ماں۔۔
ماں قربان اصغر جان آجاو۔

05۔ ہاں وہ مقام جو کے زمیں سے بلند تھا۔
بیٹی علی و زھرا کی پہنچی بصد بکا۔
دیکھی جو چلتی گردن شبیر ع پر چھری۔
زینب ع پکاری بابا غضب ہوگیا یہاں۔
زینب لپٹ کے باپ سے دیتی رہی صدا۔
ستر قدم کا فاصلہ بھائی بہن میں تھا۔

06۔ جنت نشاں ہے آج بھی روضہ حسین ع کا۔
مقصود کائنات ہے بابا حسین ع کا۔
اتنے امیر باپ کے بیٹے نے کیوں کہا۔
فریاد کر رہی ہو جو سوکھی ہوئی زباں۔۔
اماں غریب ہوں میں۔
اماں غریب ہوں میں

07۔ منظر بڑا عجیب تھا ریحان اور رضا۔
مقتل کی سمت جابے لگے شاہ کربلا۔
اور نیند سے سکینہ ع کے چہرے پہ ورم تھا۔
گودی میں لے کے شہ نے کہا اب نہ ہو فغاں ۔
میری سکینہ ع کو نیند آرہی ہے۔میری سکینہ ع کو نیند آرہی ہے


Ayam E Fatmiya Sa HAEY MAZLOOMA FATIMA ZEHRA(S.A.)

Hath Pehlu Se Math Hata Fizza Joan Rizvi 2019

Baba Lokan Menun Anjuman Shabab Ul Momineen New Kalam Ayyame Fatimiya

dil karbala mai reh gaya noha
yed Raza Abbas Zaidi Noha Lyrics

Share To:

Lyrics Noha

Post A Comment:

0 comments so far,add yours